Author Archive

اپنی بات (اداریہ)۔←

ڈاکٹر عزیر اسرائیل (مدیر)۔

اردو ریسرچ جرنل کا شمارہ تیاری کے مرحلے میں ہی تھا کہ یکے بعد دیگرے ہمارے درمیان سے دو ایسی عظیم ادبی شخصیات رخصت ہوئیں جن کی بھرپائی ممکن نہیں ۔میری مراد قاضی عبدالستار اور فہمیدہ ریاض

حب الوطنی کا ترجمان کنول ڈبائیوی←

ڈاکٹرمحمد فاروق خان، ایم ایس انٹر کالج، سکندر آباد، بلند شہر۔

ڈاکٹرمحمد فاروق خان کنول ڈبائیوی پ ۱۹۲۰؁ء۔ م۱۹۹۴؁ءاپنے  ننھال قصبہ بہجوئی ضلع مراد آبادمیں  پیدا ہوئے۔  ان کے  والد قصبہ ڈبائی ضلع بلند شہر کے  مشہور وکیل اورزمین دار تھے۔  کنول دس سال کے  تھے  کہ باپ

قاضی عبدالستارکے تاریخی ناول:ایک تنقیدی جائزہ←

ڈاکٹر احمد خان، اسسٹنٹ پروفیسر، شعبۂ اردو ، ذاکر حسین دہلی کالج، دہلی یونیورسٹی، دہلی

ڈاکٹر احمد خان اسسٹنٹ پروفیسر، شعبۂ اردو ، ذاکر حسین دہلی کالج، دہلی یونیورسٹی، دہلی ادارتی نوٹ: اردو کے معروف فکشن نگار قاضی عبدالستار کا 29 اکتوبر 2018 کو مختصر علالت کے بعد دہلی میں انتقال ہوگیا۔

عصمت چغتائی کا فکری ارتقا اور ان کے افسانے←

ڈاکٹرمحمد توحید خان، ایسوسی ایٹ پروفیسر، جواہر لعل نہرو یونی ورسٹی، نئی دہلی۔ انڈیا

آدمی جس ماحول میں پیدا ہوتا اور اس کی پرورش ہوتی ہے اس کی فکر کی تربیت اسی سماج اور ماحول میں ہوتی ہے۔ یہی وجہ ہے کہ فنکار اپنے فن میں سماج کی مثبت اور منفی

شائستہ یوسف کے شعری جہات←

ڈاکٹر محمد کاظم، ایسوسی ایٹ پروفیسر، شعبہ اردو، دہلی یونی ورسٹی۔ دہلی، انڈیا

بیسویں  صدی کا نصف آخرکئی سطحوں  پر ادب و سماج میں  تبدیلی کا ضامن رہا ہے۔ یہی وہ دور ہے جب ایک جانب ترقی پسند ادب دم توڑتا ہوا دکھائی دیتا ہے اور یہاں  تک اعلان کیا

اردو فکشن میں تانیثیت کی منفرد آواز: عصمت چغتائی←

غوثُ النساء ، ریسرچ اسکالر، ہندوستانی زبانوں کا مرکز، جواہر لعل نہرو یونی ورسٹی، دہلی

 اردو فکشن پر نظر ڈالتے ہیں تو یہ بات عیاں ہو تی ہے کہ اردو میں تانیثیت کے ا ثرات انیسوی صدی کی آخری دہائی سے ہی پڑنے لگے تھے۔ یہ وہ زمانہ تھا جب خواتین کے

دارالعلوم احمدیہ سلفیہ:صد سالہ مدوجزر←

مبصر: ڈاکٹر عزیر احمد

دارالعلوم احمدیہ سلفیہ(صد سالہ مدوجزر) تالیف: احتشام الحق                                ناشر: مکتبہ سلفیہ، دربھنگہ، بہار                 صفحات: 204 قیمت: 200                                       مبصر: ڈاکٹر عزیر احمد دارالعلوم احمدیہ سلفیہ کا شمار ہندوستان کے قدیم ترین مدارس میں ہوتا ہے۔ اس کی بنیاد

فیض احمدفیضؔ کی سیاسی شاعری←

پروفیسر سید شفیق احمد اشرفی، خواجہ معین الدین چشتی اردو عر بی فارسی یونی ورسٹی، لکھنؤ

                فیضؔ بنیادی طوررپر رومان پسند ہیں  لیکن ان کی رومانیت صرف عشقیہ موضوعات تک محدود نہیں  ہے، اس کے جوہر مختلف سمتوں  میں  بھی آشکار ہوئے ہیں ۔ ایسی ایک سمت انقلابی یا سیاسی نوعیت کی

فیض اور ترقی پسند ادب←

پروفیسر سید شفیق احمد اشرفی، خواجہ معین الدین چشتی اردو عر بی فارسی یونی ورسٹی، لکھنؤ

               فیضؔ کے تنقیدی مضامین کا صرف ایک مجموعہ ’’میزان‘‘ کے نام سے شائع ہوا اور اسی میں  انھوں  نے اپنے نظریات کی وضاحت کی اور چند شعرا سے متعلق تنقیدی

 سید اشرف جہانگیر سمنانی کی تصنیفات پر ایک نظر←

پروفیسر سید شفیق احمد اشرفی، خواجہ معین الدین چشتی اردو عر بی فارسی یونی ورسٹی، لکھنؤ

                محبوب یزدانی حضرت مخدوم سید اوحد الدین اشرف جہانگیر سمنانی(پ۶۸۸ھ۔م۱۴۰۵ھ) کا شمار اپنے وقت کے جلیل القدر صوفیا میں  ہوتا ہے۔ آپ کا سلسلۂ نسب سمنان کے سلطان ابن سلطان ساداتِ نور بخشیہ سے جا ملتا

Please wait...

Subscribe to our newsletter

Want to be notified when our article is published? Enter your email address and name below to be the first to know.