Author Archive

ن۔ م۔ راشد کی شاعری-ایران میں اجنبی کے حوالے سے←

 ڈاکٹر شاہ عالم اسسٹنٹ پروفیسر، ذاکر حسین دہلی کالج، دہلی

ڈاکٹر شاہ عالم اسسٹنٹ پروفیسر ذاکر حسین دہلی کالج، دہلی                   ن۔م۔راشد کا دوسرا شعری مجموعہ ’ ایران میں اجنبی‘ (1955) میں شایع ہوا ۔راشد نے اپنے پہلے شعری

ناوکؔ حمزہ پوری کی رباعیات کا تنقیدی مطالعہ←

ڈاکٹر مقبول احمد مقبولؔ ایسو سی ایٹ پروفیسر شعبۂ اردو مہاراشٹرا اودے گری کالج اودگیر۔413517 ضلع لاتور (مہاراشٹرا) 0928598414/07788443243

حمزہ پور،بہار کے ضلع گیا کا ایک چھوٹا قصبہ ہے۔یہی قصبہ سیدغلام السیدین ناوکؔ حمزہ پوری کا مولد ومسکن ہے۔ان کی تاریخِ ولادت ۲۱ اپریل ۱۹۳۳ ء ہے۔ناوک حمزہ پوری عصرِ حاضر کے بزرگ شاعر وادیب ہیں

نعت، نعت گوئی کی روایت اور نعت گو شعرا←

سعود عالم، مین مارکیٹ اوکھلا، جامعہ نگر نئی دہلی

     نعتِ رسول دراصل اصناف سخن کی وہ نازک صنف ہے جس میں طبع آزمائی کرتے وقت اقلیم سخن کے تاجدار حضرت مولانا جامیؔ نے فرمایا ہے: لا یُمکن الثناء کما کان حقّہٗ بعد از خدا بزرگ

غالب اور ہندوستانی تہذیب←

غلام فرید حسینی(سکالر پی ایچ ڈی، اردو) وفاقی جامعہ اردو برائے فنون، سائنس اور ٹیکنالوجی،  اسلام آباد، پاکستان

      ڈاکٹر وزیر آغا نے لکھا ہے جب واقعات ایک دوسرے سے منسلک نظر آنے لگیں یعنی سبب اور نتیجہ کے اصول کے تابع ہو جائیں نیز وہ کسی خاص خطۂ زمین یا شخصیت کی نسبت سے

   اسمعیل میرٹھی بحیثیت موضوعاتی شاعر←

وسیم حسن راجا

     انجمن پنجاب کے موضوعاتی مشاعروں سے پہلے اسمعیل میرٹھی اردونظم کی موضوعاتی توسیع میں انفرادی طور پر کامیاب تجربہ کرچکے تھے۔’’ریزہ جواہر‘‘ کے عنوان سے میڑٹھی کاکلام 1880 ئ؁ میں شائع ہوا۔اسمعیل میرٹھی نے اپنی نظموں

نند لال کول کے شعری محاسن  ’’مرقع افکار‘‘ کے حوالے←

محمد یاسین گنائی، ریسرچ اسکالر، اندور

دنیا کی سب سے میٹھی اور سُریلی زبان اردو نے نہ جانے کتنے شعراء و ادباء پیدا کئے ہیں جنہوں نے اپنی شاعری و نثری خدمات سے عالمِ انسانیت،سیاسی وسماجی اور معاشی مسائل،سیاحت و اقتصادیات،مناظر قدرت،تصوف،اسلامی تعلیمات،نسوانی

موجودہ طرز معاشرت اور ترجمہ←

ڈاکٹر ابو شہیم خان شعبہء اردو و فارسی ،ڈاکٹر ہری سنگھ گور سنٹرل یو نیور سٹی ساگر 470003 مدھیہ پردیش

ڈاکٹر ابو شہیم خان شعبہء اردو و فارسی ،ڈاکٹر ہری سنگھ گور سنٹرل یو نیور سٹی ساگر 470003 مدھیہ پردیش shaheemjnu@gmail.com Mob;07354966719                    شخصی اور عمومی اظہار اور ان

سوشل ورک کی پیشہ ورانہ اور اکیڈمک شناخت←

ڈاکٹر محمدشاہد رضا اسوسیئٹ پروفیسر و صدر شعبہ، سوشل ورک، مولانا آزاد نیشنل اردو یونیورسٹی، حیدرآباد

Abstract This research article discusses about the historical development and evolution of social work as a profession in UK, USA and India. The debate on the quest of professional status of social work has also been discussed

                             پریم چند کے ناولوں کا تجزیاتی مطالعہ←

  ڈاکٹررضا محمود، شعبۂ اردو جموں یونیورسٹی

    پریم چند کے ناولوں کا اگر گہرائی سے مطالعہ کیا جائے تو اندازہ ہوتا ہے کہ پریم چند کا ذہنی سفر انیسویں صدی عیسوی کی آخری دہائی سے شروع ہوکر بیسویں صدی کی چوتھی دہائی کے

راجندر سنگھ بیدی کی فنکارانہ جہت۔۔افسانہ ’’لاجونتی ‘‘ کے خصوصی حوالے سے←

توصیف احمد ڈار، ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو، کشمیر یونی ورسٹی

 راجندر سنگھ بیدی کانام اردو فکشن کے صف اول کے فن کاروں میں ہوتا ہے۔ انھوں نے اگر چہ اپنے ہم عصروں سے نسبتاً کم لکھا لیکن اس پایہ کا لکھا کہ اردو فکشن کی تاریخ مرتب

جمیلہ ہا شمی: حیا ت و ادبی خد ما ت←

 محمد فر ید ٭ لیکچر ار شعبئہ اُردو ، اوپی ایف بو ائز کا لج ایچ ایٹ فو ر ، اسلام آ باد،پا کستان

٭  محمد فر ید ٭ لیکچر ار شعبئہ اُردو ، اوپی ایف بو ائز کا لج ایچ ایٹ فو ر ، اسلام آ باد،پا کستان۔E-Mail:mfaridislamabad@gmail.com Abstract Jamila Hashmi: Life And Literary Contributions Jamila Hashmi made herself recognized

ناول ’’ چاند ہم سے باتیں کرتا ہے‘‘ ایک ادھورا مطالعہ←

سید امجدالدین قادری ریسرچ اسکالر، شعبہ اُردو

      موجودہ دور میں جن فعال قلم کاروں کاشمار ہوتاہے اُن میں نورالحسنین کا نام بھی شامل ہے۔ ایک طرف وہ اپنے متنوع افسانوں کے باعث قاری کے دل میں جگہ بنانے میں کامیاب ہو گئے ہیں

وحشی سعید کی کہانی ’آب ‘کا تجزیہ←

غلام نبی کمار، ریسرچ اسکالر شعبہ اردو دہلی یونی ورسٹی، 7053562468

وحشی سعید نے اپنے نام کی وضاحت میں جومعنی خیز ی دکھائی، وہی معنی خیزی ان کی افسانوی سعادت مندی قرارپاتی ہے اور ــ لفظِـ’’وحشت‘‘ فقط ــ’’وحشت‘‘ نہ رہ کر ’’سیمابیت ‘‘ کی سرحد میں داخل ہوجاتی

آب حیات کے بیانات قدیم تذکروں اور ناقدین کے حوالوں سے←

ثنا کوثر،ریسرچ اسکالر،شعبہ اردو علی گڑھ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ

ثنا کوثر،ریسرچ اسکالر،شعبہ اردو علی گڑھ مسلم یونیورسٹی علی گڑھ                         email:sanakouser2011@gmail.com mob.no.9411631723       اردو،عربی،فارسی اورعلمِ لسانیات کے ماہر شمس العلماء مولوی محمد حسین آزادؔ ۱۸۳۰ء میں  دہلی میں  پیدا ہوئے۔ والد محمد باقر اور دادا محمد

  لداخ کا سماجی و ثقافتی مطالعہ راشید راہگیر لداخی اور عبدلاغنی شیخ کے افسانوی مجموعہ    ’ اندھیرا سویرا ‘او’ر ایک ملک دو کہانی ‘کے حوالے سے←

عیسیٰ محمد کارگل لداخ ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو، حیدر آباد یونیورسٹی

 لداخ ریاست جموں و کشمیر کا تیسرا خطہ ہے۔یہاں کے ننگے پہاڑوں اور بنجر میدانوں میں اپنی دلکشی اور جاذبیت ہے،یہاں ہر طرف اونچے پہاڑ اور لمبے چوڑے میداں نظر آتے ہیں ۔ لداخ میں میلوں تک

عبدالعلیم کی صحافت نگاری کا اجمالی جائزہ←

ظفر عالم، ریسرچ اسکالر شعبہ اردو دہلی یونیورسٹی

ظفر عالم ریسرچ اسکالر شعبہ اردو دہلی یونیورسٹی ہندوستان کی صحافتی تاریخ میں  کئی شخصیتیں بہت اہم ہیں جنھوں نے ہندوستان کی ترقی کے لیے بہترین کارنامے انجام دیئے ۔ راجارام موہن رائے ، مولانا ابو الکلام

محسن اردو محسن قوم حیات اللہ انصاری←

 اخلاق احمد،        ریسرچ اسکالر        شعبۂ اردو،دہلی یو نیور سٹی،دہلی akhkaqueahd@gmail.com  Mob.9210472322-9350993422       

ہندوستا ن شروع سے ہی کثیر المذاہب اور مختلف لسانیات کا مرکز رہا ہے،ہر دور میں ہمارے ملک میں مختلف مذاہب کے ماننے والے اور الگ الگ زبانیں بو لنے والے لوگ رہے ہیں ،دنیا بھر میں

 محبِ اُردو و محبِ وطن : جگن ناتھ آزادؔ←

بلال احمد ڈار، ریسرچ اسکالر مانو حیدر آباد

  اُ ردو ادب میں جگن ناتھ آزاد ؔکا نام محتاجِ تعارف نہیں ۔ وہ ماہر اقبالیات کے ساتھ ساتھ، محقق، سوانح نگار،خاکہ نگار، سفرنامہ نگار کی حیثیتوں سے متعارف ہیں ۔ شاعری میں انہوں نے غزلیں

قدرت اللہ شہاب اور ان کی کتاب شہاب نامہ←

بلال احمد تانتری، ریسرچ اسکالر شعبہ اردو، جامعہ ملیہ اسلامیہ

’’شہاب نامہ‘‘قدرت اللہ شہاب کی خودنوشت سوانح عمری ہے۔قدرت اللہ شہاب کا شمار ان عظیم افراد میں ہوتا ہے جنہوں نے زندگی کے مختلف شعبوں میں کار ہائے نمایاں انجام دیے۔انھوں نے ادب اور بیوروکریسی کی شاہراہوں

 رپورتاژ ’’دو ملک ایک کہانی‘‘ (ابراہیم جلیس) : ایک جائزہ←

نور بانو، ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو، دہلی یونی ورسٹی

  ابراہیم جلیس کا شمار اردو کے بہترین افسانہ نگاروں میں ہوتا ہے۔کم عمری سے ہی انھوں نے افسانے لکھنے شروع کئے۔انھوں نے افسانے کے ساتھ انشائیہ اوررپورتاژ نگاری میں بھی طبع أزمائی کی۔انسانی نفسیات کا گہرا

ولیم ورڈس ورتھ کا شعری تصور نقد←

منظر کمال(ریسرچ اسکالر) ہندوستانی زبانوں کا مرکز،جے این یو نئی دہلی۔۶۷

ولیم ورڈس ورتھ(William Wordsworth)برطانیہ میں رومانی تحریک کا نمائندہ شاعراور نقاد تسلیم کیا جاتا ہے۔اس کی ولادت کبر لینڈ کے ایک قصبہ میں ۱۷۷۰ میں ہوئی،یہیں اس نے بچپن کے ایام بسر کیے۔وہ یہاں کے خوبصورت قدرتی

ناول ’آنکھ جو سوچتی ہے ‘ایک تنقیدی محاسبہ←

امتیاز احمد علیمی (ریسرچ اسکالر ،شعبہ اردو ،جامعہ ملیہ اسلامیہ،نئی دہلی)

امتیاز احمد علیمی (ریسرچ اسکالر ،شعبہ اردو ،جامعہ ملیہ اسلامیہ،نئی دہلی) موجودہ ادبی منظر نامے اور سر بر آوردہ ادبی شخصیات میں کوثر مظہری کی اپنی انفرادی شناخت ہے اور وہ شناخت ان کی تخلیقی اور تنقیدی

اردو ڈراموں میں ہندوستانی تہذیب وسماج اور قوم پرستی←

ڈاکٹر قمر الحسن شعبئہ اردو ،ستیہ وتی کالج (دہلی یونی ورسٹی

                ہندوستان زمانۂ قدیم سے ہی اپنی رنگارنگ اورمتنوع تہذیب وثقافت کے لیے پوری دنیا کی توجہ کا مرکزرہا ہے۔ یہاں کی زمینی پیداوار اور جغرافیائی حالات، علم وادب اور تہذیب وثقافت، آب وہوا، مناظر فطرت وغیرہ

سنیما کی تاریخ پر ایک نظر←

اکرم شمس، ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو، ممبئی یونی ورسٹی

انیسویں صدی کو سائنسی ایجادات کی صدی سے تعبیر کیا جا سکتا ہے۔ اس صدی میں دنیا نے بہت سی اہم ایجادات کا مشاہدہ کیا۔ سینما ٹوگراف (ـ(Cinemetograph جسے اختصار کے پیش نظر عرف عام میں سینما(Cinema)

اپنی بات←

ڈاکٹر عزیر اسرائیل، مدیر

اردو ریسرچ جرنل کا گیارہواں شمارہ پیش خدمت ہے اس شمارے میں ہم نے  کئی اہم موضوعات پر اردو کے اہم قلم کاروں کے مضامین کو  شائع کیا ہے۔  ہماری کوشش رہی ہے کہ جرنل کے معیار

قرآن، سائنس اور سائنسی مزاج۔ماضی، حال اور مستقبل←

ڈاکٹر محمد اسلم پرویز ڈائرکٹر، اسلامک فائونڈیشن برائے سائنس وماحولیات،نئی دہلی،ایڈیٹر اردو ماہنامہ سائنس،نئی دہلی

انسانی مزاج تین عناصر کا مرکب ہے۔ اوّل وہ نسلی خواص جو کسی شخص میں اس کے والدین کی جانب سے منتقل ہوتے ہیں۔ دوم اس کی تربیت اور ماحول اور سوم اس کی تعلیم۔ ان تینوں

داغ دہلوی:  خطوط کے آئینے میں←

ڈاکٹر محمد کاظم، ایسوسی ایٹ پروفیسر شعبہ اردو دہلی یونی ورسٹی، دہلی

خط انسان کی زندگی کا وہ آئینہ ہے جس میں  ان کی شخصیت کے تمام پہلو مختلف انداز میں سامنے آجاتے ہیں۔مکتوب سے نہ صرف مکتوب نگار کی شخصیت اور ان کی ظاہری و باطنی کیفیت کا

مصحفیؔ کے شعری امتیازات←

ڈاکٹر احمد امتیاز،  شعبۂ اردو، دہلی یونیورسٹی دہلی

شیخ غلام ہمدانی مصحفیؔ(۱۷۴۸ء۱۸۲۴ء) کا شمار دبستانِ لکھنؤ کے بانیوں میں ہوتا ہے تاہم ان کی شاعری کی ابتداء دلّی میں ہوئی تھی۔دلّی میں مغلیہ سلطنت کا جب شیرزاہ بکھرگیا تودلّی کو خیرباد کہہ کر لکھنؤ میں

اُردو میں غزلِ مسلسل کی روایت اور فن←

ڈاکٹر جعفر جری، چیئرپرسن بورڈ آف اِسٹڈیز ، شعبہ ء اُردو ، ساتاواہنا یونیورسٹی ، کریم نگر

عربی قصیدے نے زمانہء جاہلیت میںعروج و اِرتقا کی منزلیں طے کی تھیں۔ اسی ایک صنفِ سخن پر ساری عربی شاعری مشتمل تھی۔ پھر اِسلام کی ابتدا ہوئی اور اسلامی اقدارِ حیات کی اِشاعت و مقبولیت نے

آفاقی اقدار کا شاعر:خلیل الر حمن اعظمیؔ :نظم نگاری کے حوالے←

میر رحمت اللہ، ریسرچ اسکالر یونیورسٹی آف حیدرآباد

خلیل الر حمن اعظمیؔ اُردو ادب کی ایک ہمہ جہت شخصیت ہیں۔انہوں نے کئی اصناف میں طبع آزمائی کی ہے۔ نظم نگاری، غرل گوئی ـ، ہجو گوئی، خاکہ نگاری اور تنقید نگاری وغیرہ۔لیکن شاعری اور تنقید نگاری

اردو لسانیات:  ایک تعارف←

ڈاکٹر محمد حسین , صدرِ شعبہ اردو گورئمنٹ ڈگری کالج کولگام کشمیر

زبان سے متعلق سنجیدگی سے غور کرنے کا سلسلہ ابتدائی زمانے سے چلا آرہا ہے۔مذہبی مفکروں کے شانہ بہ شانہ اہل علم حضرات جیسے افلاطون اور ارسطو نے بھی زبان کے بارے میں اپنے خیالات کا اظہار

تخلیق و تنقید کا باہمی ربط تحقیقی مطالعہ←

ڈاکٹر ذکیہ رانی اسسٹنٹ پروفیسر شعبۂ اردو وفاقی اردویونیورسٹی، کراچی

Abstract: The world of Arts is an imaginary one where concept and feelings merged together but there in another domain of art which comprised much of an intellectual effort.Creativity and criticism have a relation which is more

اردو  اورترکی  زبان کا تقابلی مطالعہ←

سلیمان زارع، متعلم تہران یونیورسٹی

(یہ مقالہ ڈاکٹر فرزانہ  اعظم  لطفی صاحبہ استاد شعبہ  اردو ، تہران یونی ورسٹی کی نگرانی میں لکھا گیا۔) تمہید  : دنیا کی اکثر زبانوں   میں  الفاظ  کی یکسانیت کوئی  نئی بات نہیں  ۔ کبھی کبھا ر

محمد احسن فاروقی کے ناولوں میں ہیرو کا تصور←

ڈاکٹر رفیق سندیلوی پرنسپل اسلام آباد کالج فار بوائز اسلام آباد، پاکستان

’’شام اودھ‘‘ اور ’’سنگم‘‘محمد احسن فاروقی کے نمائندہ ناول ہیں۔ہیروانہ تصور کی بحث میں بھی یہی ناول کارآمد نظر آتے ہیں۔ ’’شام اودھ‘‘ کی فضا جس تہذیب سے مرتب ہوتی ہے اس میں رجعت اور جدت کے

داستان’’طلسمِ حیرت‘‘؛مابعد الطبیعیاتی مطالعہ←

ڈاکٹر محمد رفیق الاسلام شعبۂ اُردو گورنمنٹ پوسٹ گریجویٹ کالج بہاول پور

ABSTRACT: Metaphysics is the Universal fact which is deep rooted in human civilization.Social sciences are based on metaphysics and literature generates from society.So is the way that literature and metaphysics co-incide.In Urdu literature, such Tales, which have

میرزا ادیب کے طویل افسانے __فکریات ورجحانات←

ڈاکٹر نسیم عباس احمر، استاد شعبہ اردو، یو نیورسٹی آف سرگودھا

میرزا ادیب کی افسانہ نگاری کا ابتدائی غالب رجحان طویل رومانی افسانے ہیں جن کی فضا اور اسلوب داستانی ہے۔ اُن کے طویل افسانوں پر مبنی تین مجموعے اور ایک طویل افسانہ شائع ہوئے۔ ’’صحرا نورد کے

کرشن چندر بحیثیت افسانہ نگار←

ڈاکٹر دلپذیر فتح پور، پونچھ جموںو کشمیر۔

کرشن چندر کی شخصیت تعارف کی مختاج نہیں انھوں نے اُردو فکشن کے سرمائے میں بیش ہا اضافے کئے۔انکی زبان میں رس اور جادو ہے۔گھلاوٹ، حلاوت اور بیاہے جانے ولی کیفیت ہے ۔انکی تخلیقات میں حسن کی

کرشن چندر کے ناولوں میں نسوانی مسائل←

نیبولال، ریسرچ اسکالر، شعبہ اردو دہلی یونیورسٹی دہلی

 ساری دنیا میں عورتوں کو کم وبیش ایک ہی نظر سے دیکھا اور جانا جاتا ہے۔ ان کے استحصال کا سلسلہ زمانۂ قدیم سے ہر جگہ اورہر دور میں قائم رہا ہے، جنہیں وقت نے مختلف طور

حسین بن منصور حلاج اور سد ھا رتھ میں فکر ی مماثلت:  تحقیقی و تنقید ی جا ئز ہ←

محمد فر ید ٭لیکچر ار شعبئہ اُردو، اوپی ایف بو ائز کا لج ایچ ایٹ فو ر، اسلام آ باد، پاکستان

Abstract: The Critical Analysis regarding Comparison of Intellectual Leitmotifs of Hussain Bin Mansoor Hillaj and Siddhartha Novel Dasht-E-Soos is comprised of Hussain’s life while novel Siddhartha discusses the life of Gotham. Both the novels are about the

رانا پرمود: ابن صفی کا لازوال منفی کردار←

محمد عثمان احمد ریسرچ اسکالر، شعبۂ اردو جامعہ ملیہ اسلامیہ، نئی دہلی۹۰۱۵۷۳۲۲۴۹

ابن صفی جن کو ہم جاسوسی ناول نگار کی حیثیت سے جانتے ہیں انھوں ایک طویل عرصے تک جاسوسی ناول لکھے ہیں۔اپنے تخلیقی سفر کے دوران ابن صفی نے بے شمار کردار تخلیق کیے ہیں ان کرداروں

راجندر سنگھ بیدی کے ناولٹ ’’ایک چادر میلی سی‘‘میں پنجابی تہذیب←

جمشید احمد ٹھوکر ریسرچ اسکالر، یونی ورسٹی آف حیدرآباد

ادب انسانی لاشعور کی تکمیلیت کا ذریعہ ہے جو شعور کے صفحوں پربکھر کر انسانی ضمیر کو جھنجوڑتا ہے جس سے ہر ادیب یا تخلیق کار کے مافی الضمیر کے ساتھ ساتھ اس کے ماحول یا سماج

اردو تلمیحات کا حکائی پس منظر←

عمران عاکف خان، ریسرچ اسکالر ، ہندوستانی زبانوں کا مرکز، جواہر لعل نہرو یونی ورسٹی، دہلی

تلخیص اردوادب میں یوں تو بہت سی ترکیبیں، استعارے، مثالیں، تعبیریں اور بہت کچھ بوقت ضرورت شامل ہوتا گیاجس کی اپنے اپنے وقت میں بہت اہمیت رہی اور ان سے اردو ادب کا دامن مالامال ہوتا گیا۔

اردو داستان میں محبت کی نفسیات←

طاہر نواز، ریسرچ اسکالر پی ایچ ڈی اردو، وفاقی اردو یونیورسٹی اسلام آباد

ABSTRACT (PSYCHOLOGY OF LOVE IN URDU DASTAN) (Romantic Love is the major element of urdu prose dastan. It is so much necessary that even a single dastan is not completed with out romantic love. The description of

تحریک سر سید کا سیاسی ومعاشرتی پس منظر←

محمد فیض احمد،ریسرچ اسکالر، شعبۂ اردو ،دہلی یونیورسٹی

سر سید احمد خاں کا شمار ان جینیس با بصیرت اور یگانہ روزگار شخصیات میں ہے جو صفحۂ ہستی پر کبھی کبھی نمودار ہوتی ہیں اور نامساعد حالات اور ناسازگار ماحول کے باوجود اپنی ندرت فکر و

سر سید کے تعلیمی افکار، مکاتیب سر سید کی روشنی میں←

محمد شاداب شمیم ، ریسرچ اسکالر دہلی یونیورسٹی ،دہلی

 اردو زبان وادب کے معماروں میں سر سید کا نام ایک ستون کی حیثیت رکھتا ہے۔سرسید اور ان کے رفقانے اردو زبان وادب کو جدید نثر کا تحفہ عطا کیا، سر سید کے رفقا کی تعلیم و

ترقی پسندی ومارکسی تصورات کے تناظر میں مواد وموضوع کی تقدیم←

ممتحنہ اختر  پی ایچ۔ڈی ریسرچ سکالر  کشمیر یونیورسٹی‘سرینگر

فن وادب کی گتھیوں کو سمجھنے اورپرکھنے کامسئلہ محض مواد اور ہیئت کوسمجھنے کامسئلہ نہیں ہے بلکہ دونوں کی وحدت ویکسوئی سے اٹھنے والی اس حظ او رکیف وسرور ان فکری وحسی تصورات وکیفیات کو سمجھنے کامسئلہ

کلام نظیر کے انگر یزی تراجم←

ڈاکٹر ابو شہیم خان ڈاکٹر ہری سنگھ گور سنٹرل یو نیور سٹی ساگر مدھیہ پردیش

 ڈاکٹر ابو شہیم خان شعبہء اردو و فارسی ،ڈاکٹر ہری سنگھ گور سنٹرل یو نیور سٹی ساگر 470003 مدھیہ پردیش                 shaheemjnu@gmail.com Mob;07354966719#  انیسو یں صدی کے اواخر اور بیسویں

علامہ راشد الخیری- محض مصور غم؟←

ڈاکٹر حفصہ نسرین،سینیئر مدیر شعبہ اردو دائرۂ معارفِ اسلامیہ پنجاب یونیورسٹی، لاہور

ابتدائیہ: علامہ راشد الخیری اردو کے منجھے ہوئے افسانہ نگار و ناول نگار تھے اردو ادب میں افسانے کا آغاز، بقول بعضے، انہی سے ہوتا ہے(۱)۔ وہ بیک وقت ادیب، مصلح، سیرت نگار، سوانح نگار، مبصّر اور

اردوغزل کا تحقیقی  جائزہ←

جاں نثار معین، مولانا آزاد یونی ورسٹی، حیدراباد، انڈیا

تلخیص: غزل اُردو ۔ فارسی یا عربی کی ایک صنفِ سُخن ہے۔جس کے پہلے دو مِصرے ہم قافیہ ہوتے ہیں ۔ غزل کے لیے پہلے ریختہ لفظ  استعمال میں  تھا۔( امیر خسروؒ نے موسیقی کی راگ کو

اردوکالم نویسی میں قاسمی کا اختصاص←

حامد رضا صدیقی مسلم یونی ورسٹی علی گڑھ Mob. 07895674316 E-mail:hamidrazaamu@gmail.com

                احمد ندیم قاسمی دنیا ئے ادب میں تعارف کے محتاج نہیں ہیں انھوں نے اردو ادب میں مختلف اصناف میں طبع آزمائی کی اور انھوں نے ناول، افسانے،ڈرامے، صحافت، تنقید، اور کالم نگاری میں اہم کارنا

Please wait...

Subscribe to our newsletter

Want to be notified when our article is published? Enter your email address and name below to be the first to know.